لانگ مارچ میں لاشیں دیکھ راہا ہوں,رشد شریف کو خطراہ نہیں تھا،سازشیوں نے باہر بھیجا،:وااڈا

رشد شریف کو خطراہ نہیں تھا،سازشیوں نے باہر بھیجا،

اسلام آباد (اپنے سٹاف رپورٹر سے) تحریک انصاف کے رہنما ءسابق سینیٹر فیصل واوڈا نے کہا ہے کہ لانگ مارچ سے قبل اور درمیان میں لاشیں اور خون ہی خون دیکھ رہا ہوں، میں دیکھ رہا ہوں کہ نعشیں گرنے والی ہیں، میں کسی کے باپ سے نہیں ڈرتا جو مجھے مارے گا۔ وہ اگلے تین گھنٹے میں خود قتل ہوجائے گا۔ میرا موبائل فون فرانزک کیلئے حاضر ہے۔ حاضر ہے، میرا ارشد شریف سے آخری وقت تک رابطہ تھا وہ میرا دوست اور بھائی تھا، عمران خان ارشد شریف کو بہت اچھا اینکر سمجھتے تھے۔ عمران خان نے ارشد شریف کے معاملے میں ایمانداری دکھائی، ارشد شریف کے قتل کی سازش پاکستان کے اندر ہوئی۔ دوبئی سے ارشد شریف ویزہ ختم ہونے پر گئے۔

ان کی ڈائیورشن لندن دکھائی گئی لیکن وہ لندن نہیں گئے۔ ارشد شریف کو گاڑی کے اندر سے گولیاں ماری گئیں یا بہت قریب سے نشانہ بنایا گیا۔ ارشد شریف کا کوئی لیپ ٹاپ، موبائل فون اور کوئی سازوسامان نہیں ملے گا۔شواہد مٹا دئیے گئے ہیں۔ ارشد شریف کو جن پر اعتماد تھا انہوں نے ہی سازش کی، ارشد شریف کو سر اور سینے پر دو گولیاں لگیں، میری پریس کانفرنس کے بعد مجھے کوئی حراست میں لے لے یا گولی لگے مجھے کوئی پرواہ نہیں، میں اللہ کے سواءکسی کے باپ سے بھی نہیں ڈرتا، ارشد شریف کو قتل کرنے کی سازش پاکستان میں تیار ہوئی،

میں دشمنی اور دوستی نبھاتا ہوں۔ ارشد شریف کو آخری وقت تک مجبور کیا گیا کہ وہ ملک چھوڑ دے۔ اس کا اسٹیبلشمنٹ سے تعلق پازیٹو تھا، وہ بالکل پاکستان سے باہر نہیں جانا چاہتا ہے۔ انہیں اعتماد میں لے کر ڈرایا دھمکایا گیا۔ فیصل واوڈا نے کہا کہ میرا اعتماد سب سے اٹھ گیا ہے، میں نے اپنے چیئرمین سے تاحال بات نہیں کی لیکن جو میں جانتا ہوں وہ اپنے چیئرمین، ایم آئی اور آئی ایس آئی سے شیئر کر سکتا ہوں، انہوں نے کہا کہ میں کسی کا نام نہیں لے رہا وہ مارے جائیں گے۔ تحریک انصاف میں کچھ لوگ ہیں جو سازشی بیانئے کو مانتے ہیں لیکن خود سازش کا حصہ نہیں ہیں۔ مجھے عمران خان کے لانگ مارچ میں لاشیں، جنازے اور خون ہی خون دکھائی دے رہا ہے۔ ہمارا مارچ ہمیشہ پرامن ہوتا ہے لیکن پرامن احتجاج میں بہت سا خون بہتا دیکھ رہا ہوں، لانگ مارچ کے درمیان اور اس سے قبل معصوم لوگوں کا قتل عام دیکھ رہا ہوں۔ اگر مجھے میرا چیئرمین کوئی چیز بتائے تو میں اس پر 99 فیصد یقین کرلوں گا۔ فیصل واوڈا نے کہا کہ میں ارشد شریف کے قتل پر سیاست نہیں کروں گا۔ کینیا میں فارم ہاو¿س ارینج کرنا معمولی بات نہیں۔ ارشد شریف کے شواہد گم ہو چکے ہیں۔ اگر بچہ اغواءہے تو بھی پولیس کبھی سرعام گولی نہیں چلائے گی۔ یہ گاڑی کے اندر سے انہیں گولی ماری گئی ہے یا بہت قریب سے انہیں ٹارگٹ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں آنے والے چند دنوں میں نام بتادوں گا۔ سال مہینے نہیں لگیں گے ارشد شریف کو پاکستان کے اندر کوئی خطرہ نہیں تھا۔ ارشد شریف کو پاکستان سے جانے پر مجبور کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے خلاف سازش ہورہی ہے اور اس کے پلیئر بھی پاکستان میں موجود ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس الیکشن کمشن نے مجھے نااہل کیا ہے وہ 62 اے ایف کے تحت عدالت نہیں ہے۔ پی ٹی آئی میری پارٹی تھی، رہے گی اور پی ڈی ایم سے مجھے نفرت ہے، جن کی جان کو خطرہ ہے وہ پی ٹی آئی کے باہر بھی ہیں۔ فیصل واوڈا نے کہا کہ ارشد شریف کے قتل میں جس کا کردار ہے چند دنوں میں اس کا پتہ چل جائے گا۔ کینیا میں وہی رسائی لے سکتا ہے جو سوجھ بوجھ رکھتا ہے، میں عمران خان کو آستین کے سانپوں کے بارے میں بتا چکا ہوں، ارشد شریف کو دوبئی سے کسی کے خط کی وجہ سے نہیں نکالا گیا بلکہ ان کا ویزہ ختم تھا۔ ان کی ڈائیورشن لندن دکھائی گئی لیکن وہ لندن نہیں گئے انہوں نے کہا کہ اگر مجھے قتل کردیا گیا تو اس کیلئے میں نے ویڈیو بنادی ہے اور نام بھی دے دیئے ہیں۔ مجھے قتل کرنے والے بھی تین گھنٹے کے اندر اسی طرح قتل کر دیئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ گاڑی میں صرف ارشد شریف کا قتل ہوا کسی اور کا نہیں، ارشد شریف کے قتل کرنے والے اس کے بینفشری ہیں۔ اس وقت چند لوگوں کی زندگیاں خطرے میں ہیں، اب ڈرنے کی ضرورت نہیں جو ہونا ہے وہ ہونا ہے۔ رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ ارشد شریف اسٹیبلشمنٹ سے رابطے میں اور پاکستان آنے کو تیار تھا۔ اسے دبئی سے کینیا لے جانے والا کوئی عام آدمی نہیں تھا یہ بہت کلیئر ہے کہ اس قتل میں اسٹیبشلمنٹ کا کوئی کردار نہیں، فیصل واوڈا نے کہا کہ میں اپنا فون فرانزک کیلئے دے سکتا ہوں، جس میں سب سامنے آ جائے گا۔ میں اپنے پاکستانیوں کو سازش کے تحت مرنے نہیں دونگا۔ 

Leave a Reply

Your email address will not be published.