ایرانی حملے کا قبل از وقت علم تھا ، امریکہ

iran-attack-us-bases-iraq

واشنگٹن پوسٹ میں شائع رپورٹ میں آفیشلز نے دعویٰ کیا کہ انہیں خفیہ ذرائع کے ساتھ ساتھ عراق میں مواصلاتی نظام سے اس حملے کی وارننگ مل گئی تھی۔

ایک سینئر انتظامی آفیشل نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ہم جانتے تھے اور عراق نے ہمیں حملوں سے کئی گھنٹوں قبل ہی اس حوالے سے خبردار کردیا تھا، ہمیں کئی گھنٹوں قبل ہی خفیہ اطلاعات موصول ہو گئی تھیں کہ ایرانی ہمارے اڈوں کو نشانہ بنانے کی تیاری کر رہے ہیں۔

دوسری جانب ایک اور سینئر دفاعی آفیشل نے معلومات کی فراہمی میں عراق کے کردار کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اگر عراقیوں نے معلومات فراہم کی تھیں تو یہ کئی گھنٹے قبل ممکن نہیں تھا۔

واشنگٹن پوسٹ کے مطابق قبل از وقت وارننگ ملنے کی بدولت فوجی کمانڈرز کو اپنی فوج کو محفوظ مقام پر منتقل اور حفاظتی سامان لیس کرنے کا مناسب وقت مل گیا اور حملے کے کئی گھنٹوں بعد تک امریکی فوجی اپنے محفوظ ٹھکانوں میں رہے۔

ایک آفیشل نے کہا کہ حملے سے قبل کچھ دستے مغربی عراق میں واقع الاسد فوجی اڈے سے نکل گئے تھے۔

ذرائع

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *