پاکستان، بھارت مزید کسی فوجی اقدام سے گریز کریں: امریکہ

ایک بیان میں پینٹاگون نے کہا ہے کہ اس صورت حال کے بارے میں شناہان نے اعلیٰ امریکی فوجی حکام سے بات کی ہے

قائم مقام امریکی وزیر دفاع پیٹرک شناہان نے بھارت اور پاکستان کے درمیان کشیدگی میں کمی لانے پر دھیان مرکوز کر رکھا ہے، اور دونوں پر زور دیا ہے کہ وہ مزید فوجی اقدام سے گریز کریں۔

یہ بات بدھ کے روز پینٹاگون کے ایک بیان میں کہی گئی ہے۔ بیان میں یہ نہیں بتایا گیا آیا اُنھوں نے اِن ملکوں کے کسی ہم منصب سے بات کی ہے۔

ایک بیان میں پینٹاگون نے کہا ہے کہ اس صورت حال کے بارے میں شناہان نے اعلیٰ امریکی فوجی حکام سے بات کی ہے۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ’’قائم مقام سیکریٹری شناہان کا دھیان تناؤ میں کمی لانے پر مرتکز ہے اور وہ دونوں ملکوں پر زور دے رہے ہیں کہ وہ مزید فوجی اقدام سے اجتناب کریں‘‘۔

بعد ازاں، پینٹاگون کے ایک اور بیان میں کہا گیا ہے کہ بھارت پاکستان تناؤ کے حوالے سے قائم مقام امریکی وزیر دفاع وزیر خارجہ مائیک پومپیو؛ ایمسڈر جان بولٹن؛ امریکی جوائنٹ چیفز آف اسٹاف، جنرل جوزف ایف ڈنفرڈ؛ انڈو پیسیفک کمان کے سربراہ، ایڈمرل فِل ڈیوڈسن اور ’سینٹکام‘ کے سربراہ، جنرل جوزف وٹل سے رابطے میں ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ شناہان تناؤ میں کمی لانے کی کوشش کر رہے ہیں اور اُنھوں نے دونوں ملکوں پر زور دیا ہے کہ وہ کسی مزید فوجی اقدام سے گریز کریں۔

مزید تفصیلات

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *