شاہ محمود قریشی کی میر واعظ عمر کو فون کال پر بھارت برہم

india-reaction-pak-foreign-min-calls-mirwaiz-kashmire-31012019

بھارت نے پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی طرف سے استصواب رائے کا مطالبہ کرنے والی کشمیری جماعتوں کے ایک اتحاد حریت کانفرنس کے سربراہ اور سرکردہ مذہبی رہنما میر واعظ عمر فاروق کو فون کر کے انہیں اسلام آباد کی بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں انسانی حقوق کی صورت حال کو عالمی سطح پر اُبھارنے کی کوششوں سے آگاہ کرنے پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔

نئی دہلی میں حکومتی ذرائع نے اسے بھارت کے اندرونی معاملات میں مداخلت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے پاکستانی قیادت کی جانب سے بھارت کے ساتھ تعلقات پر دوغلے پن کا اظہار ہوتا ہے۔ اور بھارت کے عوام اُن تمام ’مذموم عزائم‘ کو ناکام بنا دیں گے جو ملک میں انتشار اور دہشتگردی پر مبنی تشدد کو ہوا دینے کے لئے کئے جارہے ہیں۔

اگرچہ بھارتی حکومت نے اس سلسلے میں کوئی باضابطہ بیان جاری نہیں کیا، لیکن بھارتی ذرائع ابلاغ میں حکومتی ذرائع کے حوالے سے یہ خبر نمایاں طور پر سامنے آئی ہے کہ نئی دہلی میں نریندر مودی کی حکومت نے پاکستانی وزیرِ خارجہ کی طرف سے کشمیری علحیدگی پسند لیڈر کو براہِ راست فون کرنے پر شدید خفگی کا اظہار کیا ہے۔

ذرائع کے مطابق بھارتی حکومت نے اس اقدام کو رجعت پسندانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ یہ کارروائی پاکستانی قیادت کے اُس مجموعی طرزِ فکر کے برعکس ہے جسے وہ بھارت کے ساتھ تعلقات کے سلسلے میں سامنے لانے کی کوشش کرتا آ رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق ’اس سے پاکستانی قیادت کی اپروچ میں دوغلے پن کی عکاسی ہوتی ہے‘۔

پاکستانی وزیرِ خارجہ نے منگل کے روز میر واعظ عمر کو فون کر کے اُنہیں اس بات سے بھی آگاہ کیا تھا کہ پاکستان فروری کے پہلے ہفتے میں لندن میں برطانوی پارلیمان کے ایوان زیریں ‘ہاؤس آف کامنز ‘ میں کشمیر پر ایک کانفرنس اور ایک نمائش کا اہتمام کر رہا ہے۔

مزید تفصیلات

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *